Withdrawal troops Afghanistan not yet decided : NATO
Withdrawal troops Afghanistan not yet decided : NATO

برطانوی خبر رساں ادارے ‘ رائٹرز’ کی رپورٹ کے مطابق نیٹو کے سیکرٹری جنرل نے کہا ہے کہ تشدد زدہ ملک سے نیٹو کی افواج واپس بلانے اور نہ بلانے سے متعلق تاحال کوئی فیصلہ نہیں ہوا ہے ۔

رائٹرز کی رپورٹ کے مطابق افغانستان میں غیر ملکی افواج نے کھربوں ڈالرز کی سرمایہ کاری ہے، نیٹو ممالک یکم مئی کی ڈیڈ لائن پر توجہ دینے سے گریزاں ہیں اور امن عمل کے تعطل کے باعث جمہوریت کی طرف پیشرفت کو نقصان پہنچانے کا خطرہ ہے ۔

نیٹو کی وزرائے دفاع کی ویڈیو کانفرنس کے دوران نیٹو سیکرٹری جنرل کا کہنا تھا کہ افغانستان سے فوج کے انخلاء سے متعلق تاحال کوئی فیصلہ نہیں ہوا ہے ۔ اس معاملے پر آنے والے ہفتوں کے دوران نیٹو کے اتحادی ممالک آئندہ ہفتوں میں قریبی مشاورت اور ہم آہنگی کو جاری رکھیں گے ۔

اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم بہت سارے المیوں کا سامنا کر رہے ہیں اور اس کا کوئی آسان حال نہیں ہے ۔ اگر ہم مئی کے بعد افغانستان میں رہتے ہیں تو وہاں پر مزید تشدد کا خطرہ ہے ۔

جس کے بعد ہمارے جوانوں پر حملے ہو سکتے ہیں، لیکن اگر ہم تشدد زدہ ملک سے اپنی افواج واپس بلا لیتے ہیں تو مزید خدشہ ہے کہ وہاں پر مزید ہلاکتیں ہو سکتی ہیں ۔ اسی وجہ سے ہم اپنے اتحادیوں سے مشاورت جاری رکھیں گے ۔

Facebook Comments

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here