Bilawal Bhutto today press conference
Bilawal Bhutto today press conference

 بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ رائیونڈ کے وزیراعظم کو سزا کے باوجود باہر بھیج دیا گیا، یہ احتساب نہیں، پولیٹیکل انجینئرنگ اور سیاسی انتقام ہے ، وزیراعظم کی بہن پر الزام لگے تو کچھ نہ ہو، یہ کس قسم کا ایک پاکستان ہے؟ وزیراعظم کے دوستوں پر الزام لگے تو وہ جیل نہیں جاتے ۔

 چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ قائد حزب اختلاف پنجاب سے ہو تو ضمانت مل جاتی ہے، قائد حزب اختلاف سندھ سے ہو تو جیل میں ہوتا ہے، ہم کہیں درخواست کرنے نہیں جا رہے کہ آپ کو گرایا جائے ، اپوزیشن جماعتوں میں آپ کو گرانے کی ہمت نہیں تو عام انتخابات کا انتظار کریں گے ، وزیراعظم پر خود بھی الزام لگے تو کچھ نہیں ہوتا ، خان صاحب ! اب جو احتساب ہوگا وہ عوام کریں گے ، الیکشن کمیشن کو انتخابی آرڈیننس مسترد کرنا ہوگا ۔

 بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ حکومت کو عام آدمی کا احساس ہی نہیں ہے ، وزیراعظم کا عام آدمی سے کوئی تعلق نہیں ، عام پاکستانی دکھ اور مشکلات سے گزر رہا ہے ، غربت اور بے روزگاری تاریخ کی انتہا کو پہنچ چکی ہے ، عام آدمی کا دن گزشتہ روز سے زیادہ برا ہوتا ہے ۔

چیئرمین پیپلزپارٹی نے کہا کہ بجٹ سے متعلق وزیراعظم اور ان کے ترجمانوں کے بیانات حقیقت سے دور ہیں ، شرح نمو کے دعوے حقیقت کے برعکس ہیں ، وزیرخزانہ نے خود کہا ہے کہ آئی ایم ایف پی ٹی آئی ڈیل غلط تھی ، آپ بتائیں کہ آپ آج تک آئی ایم ایف میں کیوں ہو ، مسئلہ یہ ہے کہ ان لوگوں کو معیشت کی اصل صورتحال کا علم نہیں، ہم آئی ایم ایف بجٹ کو مسترد کرتے ہیں ۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ  ہم اگلے ہفتے آنے والے بجٹ کا انتظار کررہے ہیں ، امید ہے بجٹ میں مہنگائی بے روزگاری ختم کریں گے، سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں 100 فیصد اور پاک فوج کے سپاہیوں کی تنخواہوں میں 175 فیصد اضافہ ہوگا ، امید کرتے ہیں جب بجٹ آئے گا تو ایک کروڑ نوکریاں اور 50 لاکھ گھر نظر آئیں گے ، بجٹ پیش ہونے پر دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہوجائے گا ۔

Facebook Comments

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here