China wants friendly relations with Taliban
Chinese Foreign Ministry spokesperson Hua Chunying attends a news conference in Beijing, China August 16, 2021. REUTERS/Tingshu Wang

افغانستان میں ہونے والی حالیہ تبدیلی پر بات کرتے ہوئے چینی وزارت خارجہ نے کہا کہ افغانستان کے حالات میں بڑی تبدیلی آئی ہے ۔ ہم افغان عوام کی خواہشات اور انتخاب کا احترام کرتے ہیں ۔

چینی وزارت خارجہ کے ترجمان چھون اینگ نے پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ افغانستان میں 40 سال سے بھی زیادہ مدت سے جنگ جاری ہے ۔ چین افغانستان کی خودمختاری اور مختلف گروہوں کی خواہشات کا احترام کرنے کی بنیاد پر افغان طالبان کے ساتھ رابطے میں ہے ۔ ہمیں امید ہے کہ طالبان ، افغانستان کے مختلف سیاسی گروہوں اور قومیتوں کے ساتھ مل کر اپنی صورتحال سے مطابقت رکھنے والا سیاسی ڈھانچہ قائم کرسکیں گے اور افغانستان میں پائیدار امن کی بنیاد رکھیں گے ۔

اینگ نے کہا کہ افغان طالبان نے کئی مرتبہ اس امید کا اظہار کیا ہے کہ چین کے ساتھ اچھے تعلقات برقرار رکھے جائیں نیز چین افغانستان کی تعمیر نو اور ترقی میں شامل ہو ۔ طویل عرصے سے چین نے افغانستان کے داخلی امور میں کبھی مداخلت نہیں کی اور تمام افغان عوام کے ساتھ دوستانہ تعلقات برقرار رکھنے کی پالیسی پر عمل کرتا آرہا ہے ۔

چین افغان عوام کے اپنے مستقبل کا فیصلہ کرنے کے حق کا احترام کرتا ہے اور افغانستان کے ساتھ تعاون و ہمسائیگی کے تعلقات کو فروغ دینے کا خواہش مند ہے ۔

Facebook Comments

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here